اردو پیڈ اردو ای میل محفلِ موسیقی بات سے بات محفلِ مشاعرہ شاعری تصویری کارڈ فلیش کارڈ سرورق
نئی آمد | تازہ اضافہ | تلاش کریں

توجہ فرمائیں

شاعری  کو سننے کے لیئے آپ کے کمپیوٹر پر ریل پلیر انسٹال ہونا ضروری ہے۔ اگر آپ کے پاس یہ موجود نہیں ہے تو اسے مفت ڈاون لوڈ کرنے کے لیئے
یہاں  کلک کریں۔

موسیقی شعرا کی ترتیب سے  اضافہ
  اردو لائف پر ایک نیا سلسلہ
 

 فہرست

اُستاد مہدی حسن خان
استاد امانت علی خان
اُستاد غلام علی خان
استاد نصرت فتح علی خان
ملکہٍ پکھراج
ملکہ ترنم نورجہاں
بیگم اختر
فریدہ خانم
استاد حامد علی خان
محمد رفیع
جگجیت سنگھ
اقبال بانو
زبیدہ خانم
یادگار ملی نغمے

کیا آپ جانتے ہیں؟

محفلِ موسیقی کو بہت جلد سرچ سے منسلک کر دیا جائے گا۔
گوگل۔کوم کے تعاون سے آپ اردو میں سرچ کر سکیں گے
 

محفلِ موسیقی
جگجیت سنگھ

جگجیت کی کہانی، جگجیت کی زبانی
کب سے ہوں کیا بتاؤں جہانِ خراب میں
آہ کو چاہیے ایک عمر اثر ہونے تک
بازیچہِ اطفال ہے دُنیا میرے آگے
نہ تھا کچھ تو خدا تھا، کچھ نہ ہوتا تو خدا ہوتا
ہزاروں خواہشیں ایسی کہ ہر خواہش پہ دم نکلے
ظلمت کدے میں میرے ، شبِ غم کا جوش ہے
اک چنبیلی کے منڈوے تلے - نایاب
اب تو گبھرا کے یہ کہتے ہیں کہ مر جائیں گے
اے ملیح آباد کے رنگیں گلستاں الودع
چپکے چُپکے رات دن آنسو بہانا یاد ہے
سرکتی جائے ہے رُخ سے نقاب آہستہ آہستہ
اب میرے پاس تم آئی ہو تو کیا پاؤ گی
کل چودھویں کی رات تھی، شب بھر رہا
پتا پتا بوٹا حال ہمارے جانے ہے - نایاب
آنکھ کو جام سمجھ بیٹھا تھا انجانے میں - نایاب
بس ایک وقت کا خنجر میری تلاش میں ہے
بول اِک تارے جھن جھن جھن جھن
دیکھنا جذبِ محبت کا اثر آج کی رات
میں خیال ہو کسی اور کا مجھے مانگتا کوئی اور ہے
دوستی جب کسی سے کی جائے
سر جُھکاؤ گے تو پتھر دیوتا ہو جائے گا
وصل کی رات تو راحت سے بسر ہونے دو - نایاب
گھر سے ہم نکلے تھے مسجد کی طرف جانے کو - نایاب
سنتے ہیں کہ مل جاتی ہے ہر چیز دُعا سے
تعریف اُس خدا کی جس نے جہاں بنایا - نعت  
ذرا چہرے سے کملی کو ہٹا دو یا رسول اللہ - نعت  
مینڈا عشق وی تو، مینڈا یار وی تو
ہیر واث شاہ
ست نام سری واہِ گرو - کرتن 
ہے رام ہے رام - بھجن
مائے نی مائے میں ایک شکرا یار بنایا
میں کنڈیاں والی تھور وے سجنا 
روگ بن کے رہ گیا ہے، پیار تیرے شہر دا
مائیں نی مائیں میرے گیتاں دے نیناں وچ
اے میرا گیت کسی نہ گانا
کسی نوں کوئی پیار نہ کرے
اپنی آنکھوں کے سمندر میں اُتر جانے دے
ہمسفر بن کے ہم ساتھ ہیں آج بھی
چٹھی نہ کوئی سندیس
چاند کے ساتھ کئی درد پرانے نکلے
راگ درباری - نظرِ کرم فرماؤ
تیرے قدموں پہ سر ہو گا
تجھ کو دریا دلی کی قسم ساقیا
ہاتھ چھوٹیں بھی تو رشتے نہیں چھوڑا کرتے
میرے دروازے سے اب چاند کو رخصت کر دو
کبھی یوں بھی تو ہو
کون آئے گا یہاں، کوئی نہ آیا ہوگا
پتھر کے خدا، پتھر کے صنم
مجھ کو یقیں ہے سچھ کہتی تھیں
تیرے آنے کی جب خبر مہکے
بہت دنوں کی بات ہے
تیرے خوشبو میں بسےخط میں جلاتا کیسے
بات نکلے گی تو پھر دور تلک جائے گی
وہ کاغذ کی کشتی وہ بارش کا پانی
ہونٹوں سے چھو لو تم، میرا گیت امر کر دو
واپسی
اپنے احباب کو یہ صفحہ بھیجیں
جملہ حقوق بنام اردو لائف محفوظ ہیں۔ نجی پالیسی ہمارے بارے میں استعمال كی شرا ئیط ہمارا رابطہ